0

کیا یہ کیچپ ’مریخ ٹماٹروں‘ سے بنایا گیا ہے؟

فلوریڈا: اگرچہ انسان ابھی تک مریخ پر قدم نہ رکھ سکا لیکن اتنا ضرور ہے کہ تھوڑی زیادہ قیمت میں مریخی ماحول میں کاشت کردہ ٹماٹروں کا کیچپ جلد ہی فروخت کے لیے پیش کردیا جائے گا۔

کیچپ بنانے والی مشہور کمپنی ہائینز نے ’مارز‘ کےنام سے یہ کیچپ تیار کیا ہے جس کی آزمائشی فروخت شروع ہوچکی ہے۔ سرخ ٹماٹروں کو سرخ سیارے کے عین ماحول میں کاشت کیا گیا ہے اور بہترین ٹماٹروں سے انہیں تیار کیا گیا ہے۔ ہائینز کمپنی کے مطابق اس عمل میں بہت سی ناکامیاں بھی ہوئی ہیں اور دو سال تک شبانہ روز محنت کی گئی ہے۔

اس ضمن میں فلوریڈا انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی میں واقع آلڈرن اسپیس انسٹی ٹیوٹ کے فلکی ماہرینِ حیاتیات نے دوسال تک تحقیق کی ہے۔ سائنسدانوں نے ہائینز کمپنی کی رہنمائی کی کہ مریخ کی مٹی کیسی ہوتی ہے؟ اس کے بعد وہاں ٹماٹر کی کاشت کئی گئی اور ان میں سے کیچپ کشید کیا گیا۔

ہائینز کے مطابق یہ دنیا کی پہلی خوردنی شے ہے جسے دوسرے سیارے کے حالات میں زمین کے لوگوں کے لیے تیار کیا گیا ہے۔ ہائینز کمپنی نے اس کا نام ’مارز ایڈیشن‘ رکھا ہے۔ اگرچہ اس کی فروخت ابھی شروع نہیں کی گئ ہے لیکن چند اولین بوتلیں کمپنی کے ہیڈکوارٹر میں پیش کی گئی ہیں جو پٹس برگ میں واقع ہے۔

سائنسدانوں کی 14 رکنی ٹیم

ماہرین کی 14 رکنی ٹیم نے ڈاکٹر اینڈریو پامر کی نگرانی میں کام کیا ہے اور اس پر تین تحقیقی مقالے بھی لکھے گئے ہیں۔ تمام ماہرین آلڈرِن انسٹی ٹیوٹ سے تعلق رکھتے ہیں اور اس ادارے کو 2015 میں مریخ پر انسانی مشن کے لیے قائم کیا گیا تھا۔ خود سائنسداں بھی ہائینزکی اس کاوش سے خوش ہیں کیونکہ وہ مریخی ماحول میں کسی ایک پھل یا سبزی کی کامیاب کاشت کرنا چاہتے تھے۔ سائنسدانوں کے خیال میں یہ عمل انسانوں کی دیگر سیاروں پر رہائش کے لیے بہت ضروری ہے۔

ان ٹماٹروں کو عین وہی نمی، حرارت اور روشنی دی گئی ہے جو مریخ پر موجود ہوتی ہے جبکہ اس تجربے سے خود دنیا میں نامساعد حالات میں فصلیں کاشت کرنے میں بھی مدد ملے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں