0

یہ آلہٴ سماعت بیٹری کے بغیر کام کرتا ہے

شنگھائی: ہواژونگ یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی، چین کے سائنسدانوں نے ایک ایسا آلہٴ سماعت (ہیئرنگ ڈیوائس) تیار کرلیا ہے جسے اپنا کام کرنے کےلیے کسی بیٹری کی کوئی ضرورت نہیں۔

ریسرچ جرنل ’’اے سی ایس نینو‘‘ کے تازہ شمارے میں شائع ہونے والی رپورٹ کے مطابق، اس آلے کا پروٹوٹائپ تیار کرلیا گیا ہے جسے مصنوعی کان پر کامیابی سے آزمایا بھی جاچکا ہے۔

یہ آلہٴ سماعت دراصل اندرونی کان کے اہم ترین حصے ’’صدف گوش‘‘ (کوچلیا) کی جگہ لیتا ہے جو آواز کی لہروں کو برقی اشاروں میں تبدیل کرکے دماغ تک بھیجتا ہے؛ اور اس طرح ہمیں سننے کے قابل بناتا ہے۔

اس آلے میں ’’بیریم ٹیٹانیٹ‘‘ نامی مادّے کے نینو ذرّات استعمال کیے گئے ہیں جن سے آواز کی لہریں ٹکراتی ہیں تو وہ ’’پیزوٹرائبو الیکٹرک ایفیکٹ‘‘ کہلانے والے ایک قدرتی مظہر کے تحت اس آواز کو بجلی کے سگنلوں میں تبدیل کرتے ہیں۔

واضح رہے کہ صدف گوش کا ناکارہ ہوجانا یا درست طور پر کام نہ کرنا بہرے پن (سماعت سے محرومی) کی ایک اہم وجہ ہے جو بالخصوص عمر رسیدہ افراد کو متاثر کرتی ہے۔

یہ پروٹوٹائپ بالکل ابتدائی نوعیت کا ہے جسے حقیقی انسانی کان میں نصب ہونے کے قابل بنانے کےلیے ابھی بہت کام کرنے کی ضرورت ہے۔

مصنوعی کان پر آزمائشوں کے دوران اس آلے نے 170 ہرٹز فریکوینسی والی آواز کو برقی سگنلوں میں تبدیل کیا جنہیں ریکارڈ کرکے سنا گیا تو لگ بھگ اصل آواز جیسے ہی تھے۔

امید ہے کہ اس طریقے پر ایسے مصنوعی صدف گوش (کوچلیا) بنائے جاسکیں گے جنہیں بجلی کے علاوہ مرمت اور دیکھ بھال کی ضرورت بھی نہیں ہوگی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں